35

‘متکبر اتحاد’ نے ‘کھٹے دل’ سے خواتین کے ریزرویشن کی حمایت کی، خواتین ہوشیار رہیں: مودی

بھوپال، پارلیمنٹ کے خصوصی اجلاس میں ‘ناری شکتی وندن بل’ پاس ہونے کے بعد اپنے پہلے عوامی خطاب میں وزیر اعظم نریندر مودی نے آج اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد ‘انڈیا’ کے تعلق سے خواتین سے خطاب کیا اور کہا کہ اتحادی جماعتوں نے ‘کھٹے دل’ کے ساتھ اس کی حمایت کی ہے اور ملک بھر کی خواتین کو اس بارے میں محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔
مسٹر مودی یہاں آنے والے اسمبلی انتخابات سے قبل منعقدہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے کارکنوں کے مہاکمبھ سے خطاب کرنے آئے تھے۔ اپنے تقریباً ایک گھنٹہ طویل خطاب کے دوران انہوں نے کانگریس پر سخت حملہ کیا۔ انہوں نے ترقی اور غریب بہبود سے لے کر خواتین کے ریزرویشن تک کے مسائل کے بہانے کانگریس کو گھیر لیا۔
ریاست میں گزشتہ دو اسمبلی انتخابات سے پہلے پارٹی اس قسم کے کارکن مہاکمبھ کا اہتمام کرتی ہے۔ آج کی اس بڑی تقریب میں وزیر اعلیٰ شیوراج سنگھ چوہان، پارٹی کی ریاستی یونٹ کے صدر وشنودت شرما، پارٹی الیکشن مینجمنٹ کمیٹی کے کنوینر اور مرکزی وزیر نریندر سنگھ تومر، جیوترآدتیہ سندھیا، پرہلاد پٹیل، فگن سنگھ کلستے، پارٹی کے سینئر لیڈر کیلاش وجے ورگیہ اور کئی وزراء نے شرکت کی۔
وزیراعظم نے کہا کہ اس بل کا کئی دہائیوں تک انتظار کرنا پڑا لیکن اب اس کی منظوری کے بعد بھی ملک بھر کی خواتین کو محتاط رہنے کی ضرورت ہے۔ کانگریس اور اس کی ‘مغرور’ اتحادی جماعتوں نے مجبوری میں کھٹے دل سے اس کی حمایت کی ہے۔ یہ کھٹاس اس کے بہانے میں بھی نظر آتی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اتحاد میں وہی جماعتیں شامل ہیں جنہوں نے 30 سال تک اتحاد نہیں ہونے دیا۔ ان جماعتوں نے مجبوری میں اس کی حمایت کی ہے۔
وزیر اعظم نے کہا کہ جب ملک بھر کی خواتین نے اپوزیشن جماعتوں کے کردار پر انگلیاں اٹھانا شروع کیں تو اپوزیشن جماعتیں کہنے لگیں کہ یہ اور یہ ایکٹ میں کیوں نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے گزشتہ نو سالوں کے دور میں خواتین کو بااختیار بنایا ہے اور اسی وجہ سے اپوزیشن جماعتوں نے اس ایکٹ کی مخالفت کرنے کی ہمت نہیں کی۔ ورنہ کیا وجہ تھی کہ دہائیوں سے حکومت چلانے والوں نے اسے قانون نہیں بنایا۔
ملک بھر کی خواتین سے اپیل کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن کی نیتوں میں کھوٹ ہے۔ وہ موقع ملتے ہی دھوکہ دینے کے لیے تیار ہو جاتے ہیں۔ اس سلسلے میں انہوں نے کہا کہ مشتعل اپوزیشن اب خواتین کی طاقت کو تقسیم کرنے کی کوشش کرے گی، ایسے میں ہر عورت کو ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے۔

کیٹاگری میں : state

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں