44

توشہ خانہ اور 190 ملین پاؤنڈ کیس: بشریٰ بی بی کی عبوری ضمانت میں توسیع

اسلام آباد، احتساب عدالت نے توشہ خانہ کیس اور 190 ملین پاؤنڈ اسکینڈل میں بشریٰ بی بی کی عبوری ضمانت میں توسیع کردی۔
اسلام آباد کی احتساب عدالت نے بشریٰ بی بی کے خلاف توشہ خانہ کیس اور 190 ملین پاؤنڈ اسکینڈل کیس کی سماعت کی جس سلسلے میں عمران خان کی اہلیہ عدالت میں پیش ہوئیں جب کہ ان کی طرف سے وکیل لطیف کھوسہ نے دلائل دیے۔
دوران سماعت لطیف کھوسہ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ نیب نے بیان دیا تھا کہ فی الحال بشریٰ بی بی کی گرفتاری مطلوب نہیں، نیب پراسیکیوٹر کی جانب سے استعمال کیا گیا لفظ ’فی الحال‘ پرمجھے اعتراض ہے، لفظ فی الحال کو مدنظر رکھتے ہوئے کچھ اعلیٰ عدلیہ کے فیصلے ساتھ لایا ہوں، اگرگرفتاری پر مائنڈ تبدیل ہوتا ہے تو پہلے عدالت کو آگاہ کرنا ضروری ہے، نیب باہرجاتی ہےکہتی ہے ہم نے فی الحال گرفتاری نہ کرنے کاکہا تھا، نیب کہتی ہے فی الحال کا وقت ختم ہوگیا ہے اس لیے گرفتارکرنا ہے۔
لطیف کھوسہ نے 190 ملین پاؤنڈ اسکینڈل کیس میں چیئرمین پی ٹی آئی کی گرفتاری کا عدالت میں حوالہ دیا۔
احتساب عدالت کےجج محمد بشیر نے کہا کہ ان سے بیان لے لیتے ہیں کہ یہ بشریٰ بی بی کوگرفتار نہیں کرنا چاہتے، اس پر نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ اگر میرٹ پردرخواست ضمانت خارج ہوجائے تو گرفتارکیا جاسکتا ہے۔بعد ازاں عدالت نے نیب پراسیکیوٹر اور لطیف کھوسہ کے دلائل کے بعد بشریٰ بی بی کی دونوں مقدمات میں عبوری ضمانت میں 12 اکتوبر تک توسیع کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں