37

فلپائن نے ملک میں روزگار کے فروغ کے لیے قانون بنایا

منیلا، فلپائن کے صدر فرڈینینڈ رومالڈیز مارکوس نے بدھ کے روز ملک میں روزگار کوفروغ دینے کے لیے ایک ماسٹر پلان بنانے والے قانون پر دستخط کیا۔
مسٹر مارکوس نے ایک بیان میں کہا، “نیا قانون ملک کے لیبر سیکٹر کو درپیش چیلنجوں سے نمٹنے میں مدد کرے گا، جیسے کہ کم معیار کی نوکریاں، بے میل ہنراور کم روزگاروغیرہ۔ نیا قانون ملک کے کارکنوں کی مہارتوں کو اپ ڈیٹ کرنے اور ڈیجیٹل ٹیکنالوجیز، خاص طور پر مائیکرو اور چھوٹے کاروباری اداروں کو فروغ دینے کی تحریک دے گا۔
مسٹر مارکوس نے کہا کہ یہ ایکٹ ملازمت کی تخلیق اور بحالی کی بنیاد رکھے گا اور حکومت کوقانوں کے نافذ قواعد وضوابط کو تیزی سے لاگو کرنے کا حکم دیا گیا ہے۔ فلپائن کے شماریات کی اتھارٹی نے کہا کہ جولائی 2023 میں ملک کی بے روزگاری کی شرح جون میں 4.5 سے بڑھ کر 4.8 فیصد ہو گئی اور کل 20.27 لاکھ فلپائنی ملازمت سے باہر ہوگئے۔
نیشنل اکنامک اینڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی (این ای ڈی اے) نے کہا کہ یہ قانون اعلیٰ معیار اور اعلیٰ تنخواہ والی ملازمتیں پیدا کرنے کی حکومت کی ترجیح کی حمایت کرتا ہے، جس سے غیر محفوظ روزگار، خاص طور پرسیلف ایمپلائڈ اور بغیر تنخواہ والے فیملی ورکرز میں غیر محفوظ روزگار کے بڑھتے ہوئے مدے کو حل کیاجاسکے۔
این ای ڈی اے سیکرٹری آرسینیو بالیسکان نے کہا کہ بے روزگاری اور کم روزگاری کے مسئلے سے نمٹنے کے علاوہ، نیا قانون ایک جامع منصوبہ بنائے گا جو نوجوانوں کی بے روزگاری، کام کے انتظامات کی بڑھتی ہوئی غیر رسمی، اور بیرون ملک مقیم فلپائنی کارکنوں کی واپسی کو بھی یقینی بنائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں