42

اڈانی نے 32000 کروڑ کا گھوٹالہ کیا: راہل

نئی دہلی، کانگریس لیڈر راہول گاندھی نے صنعتکار گوتم اڈانی پر سیدھا حملہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہوں نے (مسٹر اڈانی) کوئلہ گھوٹالہ کیا ہے، جس کی وجہ سے بجلی کی قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے اور عوام سے 32 ہزار کروڑ روپے کا دھوکہ کیا گیا ہے۔ مسٹر گاندھی نے بدھ کو پارٹی ہیڈکوارٹر میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ پہلے ہم 20,000 کروڑ روپے کے گھوٹالہ کی بات کر رہے تھے، لیکن اب ایک اخبار نے رپورٹ شائع کی ہے کہ 12،000 کروڑ روپے کا ایک اور گھوٹالہ ہوا ہے اور اس طرح اڈانی گروپ کو 32,000 کروڑ روپے کا نقصان ہوا ہے، کروڑوں روپے کا گھپلہ ہوا ہے۔
انہوں نے کہا کہ حیران کن بات یہ ہے کہ گھوٹالے کے دستاویزات موجود ہیں، لیکن مودی حکومت اپنے چہیتے صنعتکار کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اڈانی کے خلاف کارروائی اس لیے نہیں کی جا رہی ہے کہ انہیں ملک کے وزیر اعظم نریندر مودی کا تحفظ حاصل ہے۔کانگریس لیڈر نے کہا کہ جب اڈانی کے خلاف دستاویزات ہوں گے تو مسٹر مودی اور ان کی قیادت والی حکومت اس کے خلاف کارروائی کرے گی۔ صنعتکار کیوں کارروائی نہیں کرتا، جب کہ کانگریس ارکان پارلیمنٹ سے لے کر سڑکوں پر سوال اٹھا رہی ہے اور اس گھوٹالے کا ثبوت بھی دے رہی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اڈانی نے ہندوستان کے لوگوں کی جیبوں سے 12 ہزار کروڑ روپے نکالے ہیں اور اس طرح اڈانی نے ملک میں 32 ہزار کروڑ روپے کا کوئلہ گھوٹالہ کیا ہے۔ بجلی کے لیے ملک کے عوام کی جیبوں پر پانی کی قیمتوں میں اضافہ بجلی کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ کوئلہ گھوٹالہ کے ذریعے اڈانی نے آپ کی جیب سے 12,000 کروڑ روپے نکالے تھے، جو اب بڑھ کر 32,000 کروڑ روپے کے گھوٹالے تک پہنچ گئے ہیں۔ مسٹر گاندھی نے کہا، “کانگریس حکومت ریاستوں میں بجلی پر سبسڈی دے رہی ہے۔ مدھیہ پردیش، کرناٹک وغیرہ دے کر عوام کو راحت دے رہے ہیں لیکن اصل مسئلہ بجلی کی بڑھتی قیمتوں کا ہے جو اڈانی کے کوئلہ گھوٹالہ کی وجہ سے بڑھ رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں