61

کرناٹک میں نپاہ وائرس کے حوالے سے نگرانی میں اضافہ ہوا ہے

بنگلورو، کرناٹک نے کیرالہ میں نپاہ وائرس کے بڑھتے ہوئے معاملات کو دیکھتے ہوئے اپنے اضلاع میں نگرانی بڑھا دی ہے۔ حکام نے جمعہ کو یہ اطلاع دی۔
کرناٹک میں حکام نے لوگوں سے کہا ہے کہ وہ کیرالہ کے نیپاہ س وائرسے متاثرہ اضلاع میں غیر ضروری سفر نہ کریں۔
کرناٹک کی صحت اور خاندانی بہبود کی خدمات کے ذریعہ جاری کردہ ایک سرکلر میں کہا گیا ہے “کیرالہ ریاست کے کوزی کوڈ ضلع میں دو اموات کے ساتھ نپاہ کے چار معاملات کی تصدیق کے پیش نظر انفیکشن کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ملک بھر میں لاک ڈاؤن نافذ کر دیا گیا ہے۔ ریاست کیرالہ سے متصل علاقے کے تمام اضلاع میں نگرانی کی سرگرمیاں تیز کرنے کی ضرورت ہے۔
حکم نامے میں ریاست کے اضلاع کی طرف سے ہر سطح پر نپاہ وائرس کی بیماری کو پھیلنے سے روکنے کے لیے فوری کارروائی شروع کرنے کی بھی ہدایت دی گئی ہے۔
حکم کے مطابق ’’ کیرالہ سے کرناٹک میں داخلے کے مقامات پر بخار کی نگرانی کے لیے چیک پوسٹیں قائم کرنا، چامراج نگر، میسور، کوڈاگو اور جنوبی کنڑ جیسے سرحدی اضلاع میں بخار کی جانچ کو تیز کرنا ہے۔
محکمہ صحت کے حکام پر بھی زور دیا گیا ہے کہ وہ اسپتالوں میں تمام ضروری ادویات اور آکسیجن کے مناسبا سٹاک کو یقینی بنائیں۔ حکام نے جمعہ کو بتایا کہ کیرالہ میں اب تک نپاہ انفیکشن کے کیسوں کی تعداد چھ تک پہنچ گئی ہے۔
کیرالہ میں نپاہ وائرس کا پھیلاؤ پہلی بار سال 2018 میں کوزی کوڈ اور ملاپورم اضلاع میں دیکھا گیا تھا، جس کے دوران 17 لوگوں کی موت ہوئی تھی۔ سال 2019 اور 2021 میں ریاست میں ایک بار پھر نپاہ کے کیس رپورٹ ہوئے۔
ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے مطابق نپاہ وائرس ایک زونوسس انفیکشن ہے جو جانوروں سے انسانوں میں پھیلتا ہے اور شدید بیماری کا سبب بنتا ہے۔
اس وائرس سے متاثر ہونے پر، تیز بخار، سر درد، سانس لینے میں دشواری، گلے کی سوزش، غیر معمولی نمونیا اور کوما جیسی علامات عام طور پر دیکھی جاتی ہیں۔

کیٹاگری میں : Health

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں