28

وزیراعظم نریندرمودی نے مقررہ مدت میں اہداف حاصل کرنے کی ضرورت پر زور دیا

نئی دہلی، وزیراعظم نریندر مودی نے مقررہ مدت میں اہداف حاصل کرنے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ملک مزید انتظار کرنے کو تیار نہیں ہے۔
پارلیمنٹ کی نئی عمارت میں اپنی کارروائی کے پہلے دن منگل کو راجیہ سبھا کے اراکین سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر مودی نے کہا کہ ہمیں مقررہ وقت کے اندر اہداف حاصل کرنے ہوں گے کیونکہ ملک مزید انتظار کرنے کو تیار نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اب وقت آگیا ہے کہ عوام کی امنگوں پر پورا اترنے کے لیے نئی سوچ اور اسلوب کے ساتھ آگے بڑھیں اور اس کے لیے کام اور فکری عمل کے دائرہ کو وسیع کرنا ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ نئی پارلیمنٹ ،صرف ایک نئی عمارت نہیں ہے بلکہ ایک نئے آغاز کی علامت بھی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امرت کال کی صبح، یہ نئی عمارت 140 کروڑ ہندوستانیوں کو ایک نئی توانائی بخشے گی۔
وزیر اعظم نے کہا کہ سمویدھان سدن میں ہم نے آزادی کے 75 سال کا جشن منایا ہے ؛ جب 2047 میں نئی عمارت میں آزادی کی صدی منائی جائے گی تو یہ ’ وکست بھارت‘ میں منعقدہ جشن ہوگا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پرانی عمارت میں ہم دنیا کی معیشت کے لحاظ سے پانچویں نمبر پر پہنچ گئے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ نئی پارلیمنٹ میں، ہم دنیا کی تین بڑی معیشتوں کا حصہ ہوں گے۔ انہوں نے مزید کہا، “جب کہ ہم نے غریبوں کی فلاح و بہبود کے لیے بہت سے اقدامات کیے ہیں، نئی پارلیمنٹ میں ہم ان اسکیموں کی کوریج کی تفصیل حاصل کریں گے۔”
لوک سبھا میں پیش کئے گئے ناری شکتی وندن ادھینیم کا ذکر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ جب ہم زندگی کی آسانی کی بات کرتے ہیں تو اس آسانی کا پہلا دعویٰ خواتین کا ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کئی شعبوں میں خواتین کی شمولیت کو یقینی بنایا جا رہا ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ “خواتین کی صلاحیتوں کو مواقع ملنے چاہئیں۔ ان کی زندگی میں ‘اگر اور لیکن ‘ کا وقت ختم ہو گیا ہے ۔
وزیر اعظم نے کہا کہ پارلیمنٹ میں خواتین کے لیے ریزرویشن کا معاملہ کئی دہائیوں سے زیر التوا ہے اور ہر ایک نے اپنی صلاحیت کے مطابق اس میں حصہ رسدی کی ہے۔ یہ بتاتے ہوئے کہ یہ بل پہلی بار 1996 میں پیش کیا گیا تھا اور اٹل جی کے دور میں اس پر متعدد غور و خوض اور بات چیت ہوئی تھی، لیکن تعداد کی کمی کی وجہ سے یہ بل منظور نہیں ہو سکا تھا، وزیر اعظم نے یقین ظاہر کیا کہ یہ بل آخر کار قانون بن جائے گا ۔انہوں نے کہا کہ قانون اور نئی عمارت کی نئی توانائی کے ساتھ ، قوم کی تعمیر کے تئیں ‘ناری شکتی’ کو یقینی بنائیں۔ وزیر اعظم نے راجیہ سبھا کے ممبران سے بل کی متفقہ طور پر حمایت کرنے پر زور دیتے ہوئے خطاب کا اختتام کیا تاکہ اس کی طاقت اور پیش رسائی کو بھرپور طریقے سے بڑھایا جا سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں