64

زراعت میں ڈیٹا پر مبنی جدت کو فروغ دینے کے لئے اقوام متحدہ کی ایجنسی، نابارڈ کی پہل

نئی دہلی، اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام (یو این ڈی پی) اور نیشنل بینک فار ایگریکلچر اینڈ رورل ڈیولپمنٹ (نابارڈ) نے ہندوستان میں چھوٹے کسانوں کی مدد کے لیے زراعت اور خوراک کے نظام میں ڈیٹا پر مبنی جدت طرازی کی حوصلہ افزائی کے لیے ایک مفاہمت کی یادداشت (ایم اویو) پر دستخط کیے ہیں۔
منگل کو نابارڈ کی طرف سے جاری کردہ ایک ریلیز کے مطابق، اس معاہدے کے تحت، دونوں ادارے اوپن سورس ڈیٹا کا اشتراک کرکے چھوٹے کسانوں کی زندگی اور معاش کو بہتر بنانے کے لیے کام کریں گے تاکہ مصنوعات کی ترقی، ٹیکنالوجی کی منتقلی اور زرعی پالیسیوں کی تعمیر میں تعاون فراہم کیا جاسکے۔
اس معاہدے پر نابارڈ کے چیف جنرل منیجر سنجیو روہیلا اور یو این ڈی پی کی نائب مقامی نمائندہ ازابیل تشان نے دستخط کیے۔ نابارڈ ڈی آئی سی آر اے پلیٹ فارم کو چلائے گا اور اس کی دیکھ بھال کرے گا نیزیواین ڈی پی کی تکنیکی مدد کے ساتھ پالیسی کی تشکیل، تحقیق اور ترقیاتی سرگرمیوں کے لیے اپنے اہم جغرافیائی ڈیٹاسیٹس کا استعمال کرے گا۔
اس موقع پر نابارڈ کے چیئرمین شاجی کے وی نے کہا، “یہ دونوں تنظیموں کے لیے ڈیٹا کا استعمال کرکے کسانوں کے وسیع دیہی ہندوستانی کمیونٹی کے لیے عوامی ڈیجیٹل انفراسٹرکچر کے طور پرپیش کرنے کے متعدد مواقع پیداکرتا ہے۔ مزید ہم یواین ڈی پی کے ساتھ زیادہ گہرے تعلقات کے منتظر ہیں اور یہ ایم او یو اس سمت میں ایک قدم ہے۔”

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں