36

اسپین کی خواتین کی فٹ بال ٹیم بائیکاٹ ختم کرنے پر رضامند

میڈرڈ، بوسہ لینے کے تنازع کی وجہ سے کھیل کا بائیکاٹ کرنے والی اسپین کی خواتین فٹبال ٹیم کے بیشتر ارکان نے میدان میں واپس آنے پر رضامندی ظاہر کر دی ہے۔
یہ دعویٰ اسپین کے کھیلوں کے سیکرٹری وکٹر فرانکوس نے بدھ کو کیا۔ ان کا کہنا ہے کہ خواتین فٹبال ٹیم کی زیادہ تر کھلاڑی بائیکاٹ ختم کرنے پر رضامند ہو گئی ہیں۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق فرانکوس نے کہا کہ یہ معاہدہ سات گھنٹے سے زائد جاری رہنے والی ملاقاتوں کے بعد طے پایا۔ اس ماہ کے نیشنز لیگ گیمز کے لیے بلائے گئے 23 کھلاڑیوں میں سے دو نے اسکواڈ سے باہر ہونے کا انتخاب کیا ہے۔
انہوں نے کہا “اسپینش فٹ بال فیڈریشن (آر ایف ای ایف) نے ‘فوری اور گہری تبدیلی’ کا عہد کیا ہے” ۔
خیال ر ہے کہ گزشتہ ماہ ویمنز ورلڈ کپ کے فائنل میں اسپین کی انگلینڈ کے خلاف جیت کے بعد آر ایف ای ایف کے اس وقت کے صدر لوئس روبیلس کے فارورڈ کھلاڑی جینی ہرموسو کا بوسہ لینے کے بعد کھلاڑیوں نے کھیل کا بائیکاٹ کرنا شروع کر دیا تھا۔ تاہم بوسہ لینے کے تنازعہ کی وجہ سے روبیلز کو استعفیٰ دینا پڑا، جب کہ اسپین کے منیجر جارج ولڈا کو برطرف کر دیا گیا تھا۔

کیٹاگری میں : Sports

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں