12

کانگریس نے راجیہ سبھا میں جاسوسی کا مسئلہ اٹھایا

نئی دہلی، کانگریس کے کے سی وینوگوپال نے بدھ کے روز راجیہ سبھا میں متعدد سینئر قائدین کی جاسوسی کے الزامات کا معاملہ اٹھایا اور اس کی حقیقت معلوم کرنے کا مطالبہ کیا۔
مسٹر وینوگوپال نے وقفہ صفر کے دوران کہا کہ میڈیا کو چینی کمپنی کی طرف سے صدر ، وزیر اعظم ، کانگریسی صدر ، ممبران پارلیمنٹ ، وزرائے اعلیٰ ، فوج کے افسران اور صنعت کاروں کے ڈیٹا بیس کے لئے جانے کےبارے میں خبر آئی ہے۔
انہوں نے اس معاملے پر تشویش کا اظہار کیا اور کہا کہ حکومت کو اس پر نوٹس لینا چاہئے۔ چیئرمین ایم وینکیا نائیڈو نے کہا کہ حکومت کو جاسوسی کی سچائی کی تحقیقات کرنی چاہئے۔
اس دوران، کانگریس کے ملک ارجن کھڑگے نے بھی تعلیم کے معیار کو بہتر بنانے پر زور دیا اور کہا کہ بچوں کو ریاضی اور سائنس کی معیاری تعلیم دی جانی چاہئے تاکہ کمزور طلبا کی ترقی ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ پر انتخابات ، مردم شماری اور دیگر بہت سے کاموں کا بوجھ ہے۔
آسام گن پریشد کے وریندر پرساد ویشیہ نے آسام کے باگ جان میں گیس لیکیج کا معاملہ اٹھایا اور کہا کہ اس واقعے میں دو افراد کی موت ہوگئی ہے اور متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں