27

راجستھان۔پنجاب مقابلے میں سیمسن۔راہل کی ٹکر

شارجہ ، آئی پی ایل میں زبردست کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی راجستھان رائلز اور کنگز الیون پنجاب کی ٹیموں کے درمیان اتوار کے روز راجستھان کے سلامی اور وکٹ کیپر بلے باز سنجو سیمسن اور پنجاب کے لوکیش راہل کے درمیان سخت مقابلہ دیکھنے کو ملے گا۔
راجستھان اور پنجاب کی ٹیموں نے اپنے پچھلے میچ جیت لئے ہیں اور دونوں ٹیمیں جیت کے سلسلے کو برقرار کھنے کی کوشش کریں گی۔ راجستھان نے ٹورنامنٹ کے اپنے پہلے میچ میں رنر اپ چنئی سپر کنگز کو 16 رنز سے ہرایا تھا جبکہ پنجاب کی ٹیم نے رائل چیلنجرز بنگلور کو 97 رنز کے بڑے برق سے شکست دی تھی۔ دونوں ٹیمیں جیت سے پرجوش ہیں اور اگلے میچ کے لئے تیار ہیں۔
پنجاب دو مقابلے میں ایک جیت اور شکست کے ساتھ دو پوائنٹ حاصل کرکے ٹیبل میں دوسری پوزیشن پر ہے جبکہ راجستان کی ٹیم ایک جیت کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہے۔ پنجاب کا یہ تیسرا اور راجستھان کا دوسرا میچ ہوگا۔
راجستھان کے سیمسن نے چنئی کے خلاف صرف 32 گیندوں میں ایک چوکے اور نو چھکوں کی مدد سے زبردست 74 رن بنائے تھے جبکہ راہل نے بنگلور کے خلاف 69 گیندوں میں 14 چوکوں اور سات چھکوں کی مدد سے ناٹ آوٹ 132 رن کی جارحانہ اننگز کھیلی تھی ۔یہ راہل کا بہترین اسکور اور اس آئی پی ایل کی پہلی سنچری تھی۔
راجستھان کا اپنے دوسرے میچ سے قبل حوصلے بلند ہوگئے ہیں کہ ٹیم کے اسٹار بلے باز جوس بٹلر کی کوارنٹین کی مدت مکمل ہوچکی ہے اور وہ آئندہ مقابلے میں کھیلنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں۔ راجستھان کی ٹیم انتظامیہ نے بھی اس کی تصدیق کردی ہے۔
ٹیم میں بٹلر کی موجودگی سے راجستھان کی بلے بازی آرڈر مضبوط ہوگا جو پنجاب کے لئے سخت چیلنج بن سکتا ہے۔ راجستھان کے برانڈ ایمبیسیڈر اور مینٹر شین وارن بھی متحدہ عرب امارات پہنچ گئے ہیں۔ اگرچہ اب وہ کوارنٹین میں رہیں گے لیکن ان کی موجودگی سے ٹیم کے حوصلے بلند ہوئے ہیں۔ وارن کی کپتانی میں راجستھان نے آئی پی ایل کا پہلا خطاب اپنے نام کیا تھا۔
دوسری طرف پنجاب اس مقابلے سے پہلے اس گراؤنڈ میں راجستھان کے خلاف چھ سالہ پرانے ریکارڈ سے تحریک لے سکتا ہے کہ شارجہ میں 2014 میں راجستھان کے خلاف کھیلے گئے میچ میں اسے جیت حاصل ہوئی تھی ۔ پچھلی مرتبہ راجستھان کے خلاف کھیلے گئے مقابلے میں پنجاب کی ٹیم نے سات وکٹ سے جیت درج کی تھی۔ اس میچ میں راجستھان نے پانچ وکٹوں پر 191 رنز بنائے تھے جبکہ پنجاب نے تین وکٹ پر 193 رنز بنا کر میچ جیت لیا تھا۔ میچ میں راجستھان کی طرف سے سیمسن نے 52 اور اسٹیون اسمتھ نے ناٹ آؤٹ 27 رنز بنائے جبکہ پنجاب کی طرف سے گلین میکسویل نے 89 رنز کا اسکور کیا تھا ۔ جہاں ایک طرف پنجاب اس ریکارڈ سے پرجوش ہوگی تو وہیں راجستھان کو اپنی سابقہ شکست کا بدلہ لینے کا موقع ملے گا۔
راجستھان کی طرف سے چنئی کے خلاف پچھلے مقابلے میں کپتان اسمتھ (69) نے بھی شاندار اننگز کھیلی تھی اور سیمسن کے ساتھ 121 رنز کی بڑی شراکت قائم کی تھی۔ راجستھان کے ٹاپ آرڈر نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا لیکن ان کا مڈل آرڈرلڑکھڑا گیا تھا۔ اسمتھ کو اپنے مڈل آرڈر کومضبوط کرنا ہوگا۔
راجستھان کو اپنی گیندبازی کو بہتر بنانا ہوگا جو 216 رنز کے مضبوط اسکور کا دفاع کرتے ہوئے کچھ خاص گیندبازی نہیں کرسکی تھی ۔ چنئی کے بلے بازوں نے راجستھان کے گیندبازوں کی جم کر پٹائی کی تھی اور میچ جیتنے کے قریب تک پہنچ گئے تھے۔ چنئی نے 200 رنز بنائے تھے۔ اگرچہ راہل تیوتیا نے تین وکٹیں حاصل کی تھیں۔
اگر راجستھان کو پنجاب کے چیلنج پر قابو پالنا ہے تو اسے راہل اور مینک اگروال کی جوڑی کو سستے میں نمٹانا ہوگا جنہوں نے بنگلورو کے خلاف طوفانی اننگز کھیلی تھی ۔ پنجاب کو سیمسن ، اسمتھ اور بٹلر کی تکڑی کا سامنا کرنا ہے اور انہیں بڑی اننگز کھیلنے سے روکنا ہوگا۔
پنجاب کی طرف سے میکسویل کا بلہ گزشتہ مقابلوں میں خاموش رہا تھا اور اب وقت آگیا ہے کہ وہ فارم میں واپس آجائے جبکہ نکولس پورن کو بھی مڈل آرڈر میں اپنی ذمہ داری بخوبی سمجھنی ہوگی۔
پچھلے میچ میں پنجاب کے گیندبازوں نے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا لیکن انہیں راجستھان کے خطرناک بلے بازوں کے سامنے ایک بار پھر اپنی قابلیت دکھانی ہوگی۔ پنجاب اور راجستھان کے مابین مقابلہ برابری کا ہے ۔

کیٹاگری میں : Sports

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں