12

وزیر اعلی کے آبائی ضلع میں ہی خواتین محرومیت کا شکار ہیں۔

لکھنؤ: کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا نے اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کو ہدف تنقید بناتے ہوئے الزام لگایا ہے کہ مشن شکتی کی تشہیر کے نام پر کروڑوں روپئے صرف کرنے والی حکومت کے سربراہ کے آبائی ضلع میں ہی خواتین محرومیت کا شکار ہیں۔
محترمہ واڈرا نے بدھ کو فیس بک پوسٹ کے ذریعہ میڈیا رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا’یوپی کے وزیر اعلی کے آبائی علاقے سے آئی خبر پڑھ کر آپ کو اندازہ لگ جائے گا کہ جس سسٹم نے ابھی کچھ دنوں پہلے ہی خواتین کی سیکوریٹی کے سلسلے میں چلائی گئے’مشن شکتی’کے نام پر جھوٹی تشہیر میں کروڑوں روپئے صرف کئے ہیں۔ وہ سسٹم زمینی سطح پر خواتین کی سیکورٹی کے سلسلے میں کس طرح کا نظر انداز کرنے کا رویہ اپنائے ہوئے ہے۔
خبر کے مطابق گورکھپور میں گذشتہ دنوں 12سے زیادہ لڑکیوں کی موت کے معاملے سامنے آئے۔ ان جرائم میں سزاد لانا تو دور کچھ معاملوں میں پولیس مردہ لڑکیوں کی شناخت تک نہیں کر پائی انہوں نے لکھا’اترپردیش میں خواتین کے خلاف ہر دن اوسطا 165جرائم پیشہ واردات وقوع پذیر ہوتے ہیں۔ گذشتہ دنوں سے ایک سینکڑوں معاملے سامنے آئے ہیں جن میں یا تو انتظامیہ نے متاثرفریق کی بات نہیں سنی یا فریادی خاتون سے ہی بدتمیزی کردی۔
کیا آپ سوچ سکتے ہیں کہ جو حکومت خواتین کے نام پر اپنی پیٹھ تھپتھپانے کے لئے کروڑوں روپئے کا اشتہار دیتی ہو اس حکومت کے تھانوں میں جب خاتون شکایت لے کر پہنچتی ہے تو تھانے میں اس پر سطحی فقرے کسےجاتے ہوں اور اس کے تئیں ہمدردی کا اظہار کرنے کے بجائے اس کو رسوا کیا جاتا ہے۔
کانگریس لیڈر نے کہا کہ خاتون سیکورٹی کے سلسلے میں ہاتھرس،اناؤ اور بدایوں جیسے واقعات میں یوپی حکومت کے رویہ کو پورے ملک نے دیکھا ہے۔ خاتون سیکورٹی کی بیسک سمجھ ہے کہ خاتون کی آواز سب سے اوپر ہو مگر یوپی حکومت نے باربار ٹھیک اس کے الٹ کا م کیا۔اس سے یہ واضح ہے کہ ان کے لئے ‘بیٹی بچاؤ’اور مشن شکتی صرف کھوکھلے نعرے ہیں۔خواتین کی آواز اور ان کی آب بیتی کے سلسلے میں خواتین کے تئیں حکومت کو اپنا رویہ تبدیل کرنا پڑے گا اورخواتین کے ساتھ حساسیت کا مظاہرہ کرنے ہوگا۔

کیٹاگری میں : States

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں