13

دفاعی کمیٹی کی ہندوستانی فضائیہ کو 83 ’تیجس ‘طیاروں کی منظوری

نئی دہلی ، لڑاکا طیاروں کی قلت سے دوچار ہندوستانی ایئر فورس جلد ہی تقریبا 48 ہزار کروڑ کی لاگت سے ملک میں تیار 83 تیجس لڑاکا طیارے لے گی۔بدھ کو وزیر اعظم نریندر مودی کی زیرصدارت مرکزی کابینہ کی سکیورٹی امور کمیٹی کی میٹنگ میں خریداری کو منظوری دی گئی۔

وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے خود ٹوئٹ کرکے اس بارے میں اطلاع دی ۔ انہوں نے کہا کہ سلامتی امور کمیٹی نے فضائیہ کے لئے 83 ہلکے لڑاکاطیارے’ تیجس‘ کی خریداری کی منظوری دے دی ہے۔ توقع ہے کہ اب تک کے سب سے بڑے گھریلو فوجی معاہدے پر 48 ہزار کروڑ روپے لاگت آئے گی۔ یہ طیارے دفاعی شعبہ کے لئے سامان تیار کرنے والے ’ایچ اے ایل‘ سے خریدے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ معاہدہ دفاعی مینوفیکچرنگ کے شعبہ میں ملک کے لئے خود انحصاری کی سمت میں’گیم چینجر‘ ثابت ہوگا۔

مسٹر سنگھ نے کہا کہ دیسی تیجس مارک- 1 ای طیاروں کی خریداری کے لئے منظوری دے دی گئی ہے وہ آنے والے وقت میں فضائیہ کی ریڑھ کی حیثیت سے سامنے آئے گا۔ یہ چوتھی نسل کا لڑاکا طیارہ بہت ساری نئی ٹکنالوجیز سے آراستہ ہے جو پہلے ہندوستان میں موجود نہیں تھا۔ تیجس مارک- 1 اے میں استعمال کئے جانے والے کل پرزے اور ٹکنالوجی میں سے 50 فیصد دیسی ہیں ، جن کو جلد ہی بڑھا کر 60 فیصد کردیا جائے گا۔
انہوں نے کہا کہ ایچ اے ایل نے ناسک اور بنگلور ڈویژن میں بھی پہلے ہی مینوفیکچرنگ یونٹ تشکیل دے رکھے ہیں اور ان طیاروں کو وقت پر ایئر فورس تک پہنچانے کے لئے تیار ہیں۔ آج کے فیصلے سے ایل سی اے ماحولیاتی نظام میں توسیع ہوگی اور روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے میں مددگار ثابت ہوگا۔
وزیر دفاع نے کہا کہ ایل سی اے تیجس پروگرام ہندوستان میں ایرو اسپیس مینوفیکچرنگ ماحولیاتی نظام کو ایک متحرک خود مختار ایکو سسٹم میں تبدیل ہونے میں ایک تحریکی کردار ادا کرے گا۔
سیکورٹی کمیٹی نے اس پروگرام کے تحت فضائیہ کو بنیادی ڈھانچے کی سہولیات تیار کرنے کی بھی اجازت دی ہے تاکہ وہ اپنے ریپیئر بیس پر پر طیارے کی مرمت اور سروس کر سکے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں