21

ہندوستان کے تئیں دنیا کا اعتماد بڑھنے میں منصفانہ انصاف کے نظام کا بڑا کردار: مودی

نئی دہلی، وزیر اعظم نریندر مودی نے ہفتہ کو کہا کہ ہندوستان کے تئیں دنیا کا اعتماد بڑھنے میں یہاں کے منصفانہ اور آزاد انصاف کے نظام کا بڑا کردار ہے۔

بین الاقوامی وکلاء کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹرمودی نے حالیہ حصولیابیوں پر تبادلہ خیال کیا اور کہا کہ اعتماد سے بھرا ہندوستان آج 2047 تک ترقی یافتہ ہونے کے ہدف کے لئے محنت کر رہا ہے۔

یقینی طور پر اس مقصد کو حاصل کرنے کے لیے ہندوستان کو ایک مضبوط، غیر جانبدارانہ اور آزاد عدالتی نظام کی بنیاد کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ آج یہ کانفرنس ایسے وقت میں ہو رہی ہے جب ہندوستان کئی تاریخی فیصلوں کا گواہ بن چکا ہے۔ صرف ایک دن پہلے، ہندوستان کی پارلیمنٹ نے لوک سبھا اور اسمبلیوں میں خواتین کو 33 فیصد ریزرویشن دینے کا قانون پاس کیا ہے۔ ناری شکتی وندن قانون ہندوستان میں وومین لیڈ ڈیولپمنٹ کی نئی سمت کے ساتھ نئی توانائی دے گا۔

وزیراعظم نے کہا کہ ابھی چند روز قبل جی-20 کے تاریخی ایونٹ میں دنیا نے ہماری جمہوریت، ڈیموگرافی اور ڈپلومیسی کی جھلک دیکھی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایک ماہ قبل آج کے ہی دن ہندوستان چاند کے ساؤتھ پول کے قریب پہنچنے والا دنیا کا پہلا ملک بن گیا تھا۔

وزیراعظم نے کہا کہ کسی بھی ملک کی قانونی برادری اس کی تعمیر میں بڑا کردار ادا کرتی ہے۔ ہندوستان میں عدلیہ اور وکلاء برسوں سے ہندوستان کے عدالتی نظام کے محافظ رہے ہیں۔

کانفرنس میں دنیا بھر سے آئے ہوئے مہمانوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں ایک بات خاص طور پر اپنے غیر ملکی مہمانوں کو بتانا چاہتا ہوں جو یہاں موجود ہیں۔ حال ہی میں، ہندوستان نے اپنی آزادی کے 75 سال مکمل کیے ہیں اور آزادی کی اس لڑائی میں قانونی پیشے سے وابستہ لوگوں نے بہت بڑا کردار ادا کیا ہے۔ جدوجہد آزادی کے دوران بہت سے وکلاء نے قانون کی پریکٹس چھوڑ کر قومی تحریک کا راستہ اختیار کیاتھا۔
ہمارے بابائے قوم مہاتما گاندھی، ہمارے آئین کے چیف معمار بابا صاحب امبیڈکر، ملک کے پہلے صدر ڈاکٹر راجندر پرساد، ملک کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو، ملک کے پہلے وزیر داخلہ سردار ولبھ بھائی پٹیل، آزادی کے وقت ملک کو سمت دینے والے لوکمانیہ تلک ہوں، ویر ساورکر ہوں، ایسی کئی عظیم ہستیاں وکیل ہی تھیں۔ یعنی قانونی پیشہ ور کے تجربے نے آزاد ہندوستان کی بنیاد کو مضبوط کرنے کا کام کیا اور آج جب ہندوستان پر دنیا کا اعتماد بڑھ رہا ہے، اس میں بھی ہندوستان کے غیر جانبدار آزاد عدالتی نظام کا بڑا کردار ہے۔
انہوں نے کہا، ”مجھے یقین ہے کہ بین الاقوامی وکلاء کانفرنس اس سمت میں ہندوستان کے لیے بہت مفید ثابت ہوگی۔ مجھے امید ہے کہ اس کانفرنس کے دوران تمام ممالک ایک دوسرے کے بہترین طریقوں سے بہت کچھ سیکھ سکیں گے۔
بار کونسل آف انڈیا کی طرف سے منعقد کی گئی اس کانفرنس میں ملک کے چیف جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ، مرکزی وزیر قانون و انصاف ارجن رام میگھوال، انڈیا کے اٹارنی جنرل آر وینکٹرامانی اور سالسٹر جنرل تشار مہتا، بار کونسل آف انڈیا کے صدر منن کمار مشرا اور برطانیہ کے لارڈز چانسلر ایلکس چاک موجود تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں